اردو
Tuesday 26th of October 2021
476
0
نفر 0
0% این مطلب را پسندیده اند

معاشرے کی سعادت و خوشبختی کا واحد راستہ ولایت امیرالمومنین علیہ السلام ہے

 

 آیۃ اللہ العظمیٰ صافی

شیعوں کی پہچان غدیر ہے اور ساری دنیا ہمیں اسی نشانی سے پہچانتی ہے ،ذوی القربیٰ کی محبت شیعوں کا شیوہ ہے ، امیرالمومنین علیہ السلام اور ائمہ معصومین علیہم السلام کی ولایت کا عقیدہ رکھنا اجر رسالت کی ادائگی ہے ۔ 

حضرت آیۃ اللہ العظمیٰ صافی نے صوبہ قم کی مذہبی انجمن غدیر کے ممبران سے ملاقات کے دوران غدیر ثقافت کی ترویج میں ان کی زحمتوں کا شکریہ اور ان کی قدردانی کرتے ہوئے فرمایا: غدیری ثقافت کی ترویج کے لئے جو اقدام کئے گئے ہیں خاص کر بیرون ملک جو سرگرمیاں ہو رہی ہیں سب قابل قدر ہیں اور ہمیں امید ہے کہ ان سرگرمیوں میں روزافزون اضافہ ہوتا رہے گا۔ 

آپ نے فرمایا: تمام شیعوں کی ذمہ داری ہے کہ غدیر کی یاد تازہ کریں اور چونکہ قم ہمیشہ سے شیعوں کا محور مرکز رہا ہے اور یہاں پر حضرت معصومہ (س) کا روضہ ہے ، لہذا اس شہر کو ولایت و امامت کے مسئلہ میں تمام شیعوں کے لئے نمونہ عمل ہونا چاہئے ۔

حضرت آیۃ اللہ العظمیٰ صافی نے فرمایا کہ اگر کوئی دنیا کے برابر عمر پائے اور تمام زندگی اعمال صالحہ میں گزارے لیکن ولایت امیرالمومنین (ع) سے محروم ہو تو اس کے اعمال کی کوئی قیمت نہیں ہے چونکہ امیرالمومنین علیہ السلام کی ولایت تمام اعمال کی قبولیت کی شرط ہے۔ دنیا و آخرت کی سعادت بھی اسی ولایت پر منحصر ہے لہذا اگر کوئی معاشرہ سعادتمند بننا چاہتا ہے تو اس کا واحد راستہ انھیں معصومین کی ولایت ہے ۔ 

معظم لہ نے فرمایا: دنیا و آخرت کے امور میں علی علیہ السلام جیسا کوئی مقتدا اور پیشوا نہیں مل سکتا ہے ۔

آپ نے مسلمانوں کے اس اعتقاد کی جانب اشارہ کرتے ہوئے فرمایا : مسلمانوں کی نظر میں اگر کسی کے اندر چار صفتیں( ایمان، زہد، جہاد اور علم )موجود ہوں تو اس کا رتبہ اصحاب پیغمبر(ص) سے بلند و برتر ہے اور علی علیہ السلام ان تمام صفات میں سب سے اعلیٰ منزل پر فائز تھے جس کا اعتراف غیر مسلمانوں نے بھی کیا ہے ۔  

مرجع عالیقدر نے مولائے کائنات کی عظمت و بزرگی کو بیان کرتے ہوئے فرمایا : امیرالمومنین (ع) کا وجود سراپا عظمت ہے ان کی فضیلت اور بزرگی کی حدوں کو کوئی درک نہیں کر سکتا ہے وہ رسول اکرم(ص) کے بعد عالم اسلام کی پہلی شخصیت ہیں ۔

آخر سخن میں آپ نے مولائے کائنات کو تمام صفات میں نمونۂ عمل قرار دیتے ہوئے فرمایا: امیرالمومنین علیہ السلام کو دنیا کے سامنے پہچنوانا اسلام کی سب سے عظیم خدمت ہے اور مکتب امیر المومنین علیہ السلام خیرات و برکات کا عظیم ترین مکتب ہے ۔

 


source : http://www.saafi.net
476
0
0% (نفر 0)
 
نظر شما در مورد این مطلب ؟
 
امتیاز شما به این مطلب ؟
اشتراک گذاری در شبکه های اجتماعی:

latest article

معاشرے کی سعادت و خوشبختی کا واحد راستہ ولایت ...
خیانت کے خطرات
اخلاق اور مکارمِ اخلاق
سنہالی زبان میں قرآن مجید کے اولین مترجم شیعہ ہوگئے
من سعادة الرجل ان یکون لہ ولد یستعین بھم
اسلام کی نگاہ میں خواتین کی آزادی
مثالی معاشرے کی اہم خصوصیات۔
وہ دعا جس کی آیت اللہ بہجت نے رہبر انقلاب کو وصیت ...
خدا کي تعريف
مسلمانوں کے ایک دوسرے پر حقوق

 
user comment