حزب اللہ کا بے سر شہید پانچ سال بعد آغوش مادر میں+تصاویر


شرح زیارت وارث - شب نهم دوشنبه (19-7-1395) - محرم 1437 - حسینیه حضرت قاسم - 5.93 MB -

لبنان کے ہزاروں افراد نے اس شہید مدافع حرم کا پرنم آنکھوں سے تشییع جنازہ کیا جس کی شہادت کی سید الشہدا(ع) نے خوشخبری دی۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ خیبر صہیون تحقیقاتی ویب گاہ کے مطابق،  ’’ذوالفقار حسن عز الدین‘‘جو شام کے علاقے غوطہ شرقیہ میں اسرائیلی تکفیری دھشتگردوں کے ہاتھوں اسیر ہوئے اور پانچ سال قبل شہید کر دئے گئے تھے کا جسد خاکی بغیر سر کے اپنی ماں کی آغوش میں پلٹ آیا ہے۔
شہید کے والد کا کہنا تھا: میں اس بات سے بہت خوش ہوں کہ میرے بیٹے کا جنازہ واپس آیا ہے۔ لیکن اس کا جنازہ بغیر سر کے ہے۔ پانچ سال اس نے اسیری میں گزارے۔ میں نے پوری خوشی کے ساتھ اپنے بیٹے کا استقبال کیا اس لیے کہ میرا مولا حسین(ع) بھی سر کے بغیر تھا۔
اس شہید کی ماں کا بھی کہنا تھا: میں سید حسن نصر اللہ کو سلام کہنا چاہتی ہوں۔ اور اس کا شکریہ ادا کرتی ہوں کہ اس نے ہمارے اسیروں کو نہیں چھڑوایا۔ میں شہید ذوالفقار کی ماں ہونے کے عنوان سے سید حسن پر فخر کرتی ہوں میری جان سید حسن پر قربان۔ میرے چاروں بیٹے تجھ پر قربان۔
ذوالفقار عزالدین لبنان کے علاقے ’صور‘ کے رہنے والے تھے وہ شام میں حرم آل رسول (ص) کی حفاظت کے لیے حزب اللہ کے دیگر رضاکاروں کے ہمراہ دھشتگردوں سے محو جھاد رہے۔ شام کے علاقے غوطہ شرقیہ میں تکفیری دھشتگردں نے آپ کو گرفتار کر لیا اور پانچ سال اسیر رکھنے کے بعد آخر کار ان کا سر تن سے جدا کر دیا۔
ذوالفقار حسن نے اپنی شہادت سے قبل خواب میں دیکھا کہ ان کا سر تن سے جدا کر دیا گیا ہے۔ وہ خواب سے اٹھتے ہیں اور پھر سو جاتے ہیں اس مرتبہ خواب میں دیکھتے ہیں کہ مولا امام حسین (ع) خواب میں تشریف لاتے ہیں اور ان سے فرماتے ہیں: میرے پیارے! تمہارا سر تن سے الگ کر دیا جائے گا جیسا کہ میرا سر کربلا میں الگ کر دیا گیا تھا۔ لیکن تم کوئی درد محسوس نہیں کرو گے اس لیے کہ فرشتے تمہیں اطراف سے گھیرے ہوں گے۔ کچھ ہی دیر بعد ان کے خواب کی تعبیر سامنے آ گئی اور جیسا خواب میں دیکھا تھا ویسا ہی ہوا۔
سپاہ پاسداران کے کمانڈر جنرل قاسم سلیمانی نے چند روز قبل لبنان کے اس ۱۷ سالہ نوجوان کی شہادت پر کہا تھا: اس نے اپنے دوستوں کو یوں خواب سنایا کہ ۲ دن سے میں خواب دیکھ رہا ہوں کہ دشمن میرے سینے پر سوار ہوتے ہیں تاکہ میرا سر کاٹیں میں چیختا چلاتا ہوں تو اتنے میں امام حسین تشریف لے آتے ہیں اور فرماتے ہیں نہیں ڈرو میرا سر بھی تو ایسے ہی کاٹا تھا۔ درد محسوس نہیں کرو گے۔

کلیپ های منتخب این سخنرانی
سخنرانی های مرتبط
پربازدیدترین
سخنرانی استاد حسین انصاریان حسینیه حضرت قاسم(ع) پاییز 1395ش تهران-حسینیه حضرت قاسم بن الحسن علیه السلام سخنرانی استاد انصاریان در حسینیه حضرت قاسم(ع) سخنرانی مکتوب استاد حسین انصاریان دهه اول محرم 1395