اٹارنی جنرل ہشام برکات کے قتل کے بعد مصر کے قوانین میں تبدیلی


امیرالمومنین علی (ع) - جلسه سوم _ 4 رمضان - رمضان 1436 - مسجد حضرت امیر -  

کی رپورٹ کے مطابق مصر کے صدر عبدالفتاح السیسی نے اتوار کے دن دہشت گردی مخالف قانون کی منظوری دے دی۔ مصر کے سرکاری اخبار میں اس متنازعہ قانون کو شائع کیا گیا ہے۔ اس اخبار کے مطابق کسی بھی دہشت گردانہ حملے کی غلط رپورٹنگ کرنے والوں پر بھاری جرمانے کے علاوہ انہیں ملازمت سے برطرف بھی کیا جا سکے گا۔ اس قانون کے تحت غلط رپورٹنگ پر کم از کم دو لاکھ پاؤنڈ جرمانہ عائد کیا جائے گا۔ ناقدین نے اس قانون کو میڈیا پر قدغن لگانے کے مترادف قرار دیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ اس کی وجہ سے چھوٹے اخـبار حتی بند بھی ہو جائیں گے۔ مصر کی حکومت نے پہلے مجرمین کے لئے قید کی سزا کی تجویز دی تھی لیکن ذرائع ابلاغ کی جانب سے شدید ردعمل کے بعد یہ تجویز مسترد ہو گئی۔
مصر کے صدر عبدالفتاح السیسی نے اٹارنی جنرل ہشام برکات کے قتل کے بعد مصر کے قوانین میں اصلاح کا حکم دیا تھا۔ اس قانون کے بارے میں مصر میں ملا جلا ردعمل سامنے آیا ہے۔ مصر کے بعض عوام کا کہنا ہے کہ اس قانون سے مصر میں دہشت گردانہ حملے بند ہو جائیں گے جبکہ بعض کا کہنا ہے کہ اس قانون سے اصل نشانہ حکومت کے مخالفین کو بنایا جائے گا۔

.......

سخنرانی های مرتبط
سخنرانی استاد انصاریان سخنرانی مکتوب استاد انصاریان سخنرانی استاد انصاریان در مسجد امیر سخنرانی ها