اردو
Thursday 9th of December 2021
853
0
نفر 0
0% این مطلب را پسندیده اند

تذکرہ موت پيغمبر کے فرمان ميں

اکثر واذکر ھاذم اللذات قيل وما ھاذم اللذات قال الموت- (مشکوٰة) ترجمہ: جب صبح کرے- پس انتظار شام کا نہ کر- جب شام کرے- تو صبح کا انتظار مت کر اپنے آپ کو مردوں ميں شمار کر- من مات فقد قامت قيامتہ- ترجمہ: لذتوں کو مٹانے والي کو اکثر ياد کيا کرو- صحابہ نے عرض کيا- لذتوں کو مٹانے والي کيا ہے؟ فرمايا (موت)- ان المي
تذکرہ موت پيغمبر کے فرمان ميں

اکثر واذکر ھاذم اللذات قيل وما ھاذم اللذات قال الموت- (مشکوٰة)

ترجمہ: جب صبح کرے- پس انتظار شام کا نہ کر- جب شام کرے- تو صبح کا انتظار مت کر اپنے آپ کو مردوں ميں شمار کر-

من مات فقد قامت قيامتہ-

ترجمہ: لذتوں کو مٹانے والي کو اکثر ياد کيا کرو- صحابہ نے عرض کيا- لذتوں کو مٹانے والي کيا ہے؟ فرمايا (موت)-

ان الميت ليعذب ببکاء اھلہ-

ترجمہ: جو مرگيا- اس کے لئے قيامت قائم ہو گئي- (ف) اس قيامت سے مراد قيامت صغريٰ ہے-

اغتنم خمساً قبل خمسٍ شبابک قبل ھر مک وصحتک قبل سقمک وغناء ک قبل فقرک وحياتک قبل موتک وفراغک قبل شغلک-

ترجمہ: گھر والوں کے رونے سے ميت کو عذاب ہوتا ہے- بشرطيکہ اگر رونے والے کي زبان سے خلاف شرع الفاظ سرزد ہوئے-

ترجمہ: پانچ چيزوں کو پانچ چيزوں سے پہلے غنيمت سمجھ- جواني کو بڑھاپے سے پہلے  صحت کو بيماري سے پہلے  تونگري کو تنگدستي سے پہلے  زندگي کو موت سے پہلے  فراغت کو مشغوليت سے پہلے-


source : tebyan
853
0
0% (نفر 0)
 
نظر شما در مورد این مطلب ؟
 
امتیاز شما به این مطلب ؟
اشتراک گذاری در شبکه های اجتماعی:

latest article

اصحاب اعراف
امام زمانہ علیہ السلام کے فرامین
ایمان چار ستونوں پر قائم ھے
نوروز کی اسلام میں حیثیت پر سیر حاصل گفتگو
حفظ قرآن کے فوائد
عزاداری اور انتظارکا باہمی رابطہ
خدا کے پیارے نبی کے چچا ، امیر حمزہ امیر حمزہ۔
اسلام میں خواتین کا کردار
شام اور امیر تیمور کا واقعہ
حضرت زینب سلام اللہ علیھا کی زندگی پر ایک نظر

 
user comment