اردو
Saturday 31st of July 2021
244
0
نفر 0
0% این مطلب را پسندیده اند

بڈگام میں بزرگ عالم دین کے مقبرے کو نذر آتش کرنے کی مذمت

ہندوستان کے زیر انتظام کشمیر میں متحدہ مجلس علماء جموں و کشمیر نے ایک بیان میں بڈگام میں آستانہ عالیہ جہاں کشمیر کے معروف علمی خانوادے موسوی کے مقتدر علماء اور روحانی شخص
بڈگام میں بزرگ عالم دین کے مقبرے کو نذر آتش کرنے کی مذمت

ہندوستان کے زیر انتظام کشمیر میں متحدہ مجلس علماء جموں و کشمیر نے ایک بیان میں بڈگام میں آستانہ عالیہ جہاں کشمیر کے معروف علمی خانوادے موسوی کے مقتدر علماء اور روحانی شخصیات مدفون ہیں کو نذر آتش کرنے کی کوشش کی شدید مذمت کرتے ہوئے اس گھناﺅنے واقعہ میں ملوث عناصر کی فوری گرفتاری کا مطالبہ کیا ہے، بیان میں اس سانحہ پر خانوادئہ موسوی کے جملہ اکابرین خصوصاً متحدہ مجلس علماء کے معزز بانی رکن اور سرکردہ عالم دین آغا سید حسن الموسوی الصفوی سے اس سانحہ پر اپنی دلی صدمے کا اظہار کیا گیا ہے، بیان میں کہا گیا کہ آستانہ عالیہ کو نذر آتش کرنے کے پیچھے جن شرپسند عناصر کی کارستانی ہے ضلعی انتظایہ کو چاہئے کہ وہ اسکی مکمل تحقیقات کرکے ملوث افراد کو گرفتار کرے۔ دریں اثنا مجلس علماء کے ترجمان نے بھارت کی مختلف ریاستوں میں زیر تعلیم کشمیری طلباء اور طالبات کیخلاف انتہا پسند عناصر کی جانب سے ان کو بلا وجہ تنگ و طلب کئے جانے اور انکے تعلیمی کیریئر میں رخنہ پیدا کرنے کی دانستہ کوششوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ گزشتہ کئی برسوں سے ایسے متعدد واقعات پیش آئے جن میں ان ریاستوں میں مختلف پیشہ ور کالجوں اور یونیورسٹیوں میں زیر تعلیم کشمیری طلباء کو جسمانی اور ذہنی اذیت سے دوچار کیا گیا۔

ترجمان نے پنجاب یونیورسٹی چندی گڑھ میں پی ایچ ڈی کررہی شہر خاص کی طالبہ کے ساتھ مذکورہ یونیورسٹی ہی کی چند مقامی طالبات کی جانب سے زیادتیاں برتنے پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مذکورہ طالبہ کو جس غیر انسانی طریقے سے ذہنی اور جسمانی اذیتوں سے گزارا جارہا ہے اس ضمن میں مذکورہ یونیورسٹی حکام کی مجرمانہ خاموشی وہاں زیر تعلیم کشمیری طالب علموں کے تعلیمی مستقبل کو مخدوش بنارہی ہے، ترجمان نے کہا کہ ریاستی حکومت کی جانب سے اس اعلان کے باوجود کہ ملک کی مختلف ریاستوں کے تعلیمی اداروں میں زیر تعلیم کشمیری طلباء کی مشکلات کے ازالے کیلئے ایک باضابطہ ہیلپ لائن مقرر کی گئی ہے لیکن اس کے باوجود اس طرح کے واقعات پر ریاستی حکومت کی جانب سے کوئی بھی عملی اقدام نہ اٹھانے کی وجہ سے ان طالب علموں اور ان کے گھر والوں کو شدید تحفظات میں مبتلا کردیا ہے۔


source : abna
244
0
0% (نفر 0)
 
نظر شما در مورد این مطلب ؟
 
امتیاز شما به این مطلب ؟
اشتراک گذاری در شبکه های اجتماعی:

latest article

برلین میں مجالس عزاء 1431 ھ کی مختصر رپورٹ
فتنے کے ماحول میں موقف شفاف ہونا چاہئے
ہندوستان اور پاکستان کی فورسز کے درمیان لائن آف کنٹرول ...
متعصب یہودیوں کے ہاتھوں اسحاق نبی (ع) کے مقبرے کی ...
یمنی فوج اور عوامی رضاکروں نے سعودی عرب کے چار فوجی ...
صہیونی ریاست کو تا قیامت تسلیم نہيں کریں گے
قاہرہ میں اجازت نامے كے بغير طبع شدہ قرآن كريم كے ...
سعودی سفارتخانے نے ایرانی قاریوں کو ویزا دینے سے انکار ...
سعودی عرب: القاعدہ کی فرسٹ لیڈی گرفتار
صہیونی شرپسندوں نے کلیسا کو تباہ کردیا

 
user comment