اردو
Wednesday 10th of August 2022
0
نفر 0

ہندوستان کے ایک اسلامی سکول میں پردہ لازمی

بین الاقوامی: ہندوستان کے شمال میں ایک گرلز اسلامی سکول نے طالبات کے یونیفارم کے طور پر اس سکول میں پردہ کی پابندی کو لازمی قرار دیا ہے اور اپنے ساتھ موبائل رکھنے پر پابندی لگا دی ہے۔

خبررساں ایجنسی شبستان نے الشروق کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ ہندوستان کے شمال میں واقع صوبہ اترا پردیش میں ایک گرلزاسلامی سکول نے سکول کے یونیفارم کے طور پر طالبات پرپردہ اوڑھنے کو لازمی قرار دے دیا ہے۔

کان پور شہر کے جوبلی گرلز سکول کی پرنسپل نے کہا ہے کہ حجاب طالبات کے یونیفارم کا ایک حصہ ہے اورکم عمر لڑکیاں چہرہ چھپانے کی بجائے سر کوڈھانپیں گی اور یہ پردہ ان کی آزادی میں کوئی رکاوٹ نہیں بلکہ ان کی شخصیت کا حصہ ہے۔

شاینی نے کہا ہے کہ سکول میں موبائل فون ساتھ لے کر آنے کو اس لیے منع کیا گیا ہے تاکہ سکول میں نظم وضبط کو قائم کیا جاسکے اور طالبات پر بیرونی اثرات مترتب نہ ہوں۔

انہوں نے مزید کہا ہے کہ اس پابندی کی ایک وجہ طالبات کی فکری برائیوں کو روکنا ہے کیونکہ کم عمر طالبات اچھے اور برے میں تمییز نہیں دے سکتی ہیں


source : http://shabestan.net/
465
0% (نفر 0)
 
نظر شما در مورد این مطلب ؟
 
امتیاز شما به این مطلب ؟
اشتراک گذاری در شبکه های اجتماعی:
لینک کوتاه

latest article

مساجد میں اسلامی علامتوں کے خلاف جدوجہد،اسلام کا ...
قرآن پر عمل امت مسلمہ کے وقارو عظمت اور پیشرفت و ...
شیخ زکزاکی کی آنکھوں کے سامنے ان کے تین بیٹوں کی ...
حرم نبوی (ص) میں کیمرے والے موبائل لے جانے کی ...
عالم اسلام اور امريكہ كے تعلقات كو نقصان پہنچانے ...
شیخ الازہر: داعش کے ہاتھوں میں اسلحہ امریکی اسلحہ ...
ہندوستان؛ نوگاواں سادات میں شیخ زکزاکی کی رہائی ...
میانمار کے مسلمانوں پر ظلم وستم
مصرمیں پیغمبر اسلام (ص) کی توہین کرنے والوں پر ...
علما‏ئے الازہر: وہابیت اسلام اور عالمی امن کے ...

 
user comment