اردو
Tuesday 22nd of September 2020
  732
  0
  0

پچیس سالہ یہودی طالبہ نے اسلام قبول کرلیا

نو مسلم سابقہ یہودی طالبہ نے اپنا نام فاطمہ حیدری بتاتے ہوئے اس دلچسپ تبدیلی کا انکشاف کیا ہے۔ 

فاطمہ حیدری غاصب صہیونی ریاست کے دارالحکومت تل ابیب کی رہنے والی ہیں اور ان کا پرانا عبرانی نام کملیک فیلمک ہے۔ 

فاطمہ حیدری نے اسلام کی طرف مائل ہونے اور دین اسلام قبول کرنے کے بارے میں بتایا: میں 15 سال کی عمر تک اپنے ایرانی نژاد والد کے ہمراہ تل ابیب میں رہتی تھی تا ہم ہم لوگ دس برس قبل ایران آگئے۔ 

ایران آنے کے بعد مجھے الزہرا ویمن یونیورسٹی کے الہیات کے شعبے میں داخلہ مل گيا جس کی بنا پر اسلام اور اسلامی تعلیمات سے میرا لگاؤ بڑھ گیا؛ اہل بیت علیہم السلام کی سیرت کے مطالعے نے میرے اندر اسلام قبول کرنے کا جذبہ ابھارا اور میں گہرے مطالعے اور تحقیق کے بعد بالآخر مسلمان ہوگئی۔ 

فاطمہ حیدری نے بتایا کہ 15 سال کی عمر تک صہیونی ریاست کے دارالحکومت تل ابیب میں رہتی تھی اور اس دوران میں نے بارہا فلسطینیوں کو صہیونیوں کے ظلم و ستم سے نجات دلائی۔ 

اس نو مسلم طالبہ کے مطابق اسلام ایک لامتناہی کلمہ اور انسان کی معراج ہے اور میں سمجھتی ہوں کہ مجھے آپ کے اس دین کو قبول کرنے کی دعوت ملی ہے۔


source : http://www.abna.ir
  732
  0
  0
امتیاز شما به این مطلب ؟

latest article

پاکستان میں شہباز شریف کو وزیر اعظم نامزد کرنے کا فیصلہ
موغادیشو میں کاربم دھماکے میں 6 افراد ہلاک جبکہ 10 زخمی
شیخ نمر کی کتاب ’’عزت و وقار کی عرضداشت‘‘ ۱۱ زبانوں ...
قرآن جلانے کے منصوبے پر عملدرآمدکے خطرناک اثرات ...
متنازعہ فلم «فتنہ» کا ڈائریکٹر دوسری اسلام مخالف فلم ...
بحرینی علماء کا آل خلیفہ کے وزیر کی ہرزہ گوئیوں کے خلاف ...
میانمار کے مسلمانوں پر ظلم وستم
حیدرآباد دکن: مکہ مسجد، اجمیر شریف دھماکوں میں ...
تہران میں بیک وقت تین بین الاقوامی نمائشوں کا آغاز ...
بغداد کی علاقے الحسینیہ میں کاربم دھماکہ، بدر تنظیم کا ...

 
user comment