اردو
Friday 25th of September 2020
  756
  0
  0

مشترکہ اسلامی اقدام کی تقویت ناگزیر

منوچہرمتکی:وزیر خارجہ منوچہر متکی نے اسلامی ممالک کے درمیان مشترکہ تعاون و ہم آہنگی اوراسلامی اقدام کی تقویت کو ایک ناقابل انکار ضرورت قرار دیا ہے ۔

اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ منو چہر متکی نے افریقی ملک یوگینڈا کے دارلحکومت کمپالا میں ہونے والےاسلامی کانفرنس تنظیم او آئی سی کے وزرائے خارجہ کے پینتیسویں اجلاس میں کہا کہ  مسلمانوں کی خود اعتمادی کو ختم کرنے اور تفرقہ اندازی کی غرض سے    

ناجائز طریقوں سے  اسلامی ممالک پر قبصہ کرنا  اب بھی تسلط پسند ممالک کے ایجنڈ ے میں شامل ہے۔انہوں نے امریکی فوجیوں کی موجودگي اور دہشت گردانہ کارروائیوں کو عراق کے عدم استحکام کے سلسلے میں سکے کے دو رخ بتایا اور کہا کہ اقوام متحدہ کے منشور کی شق نمبر سات سے مسئلۂ عراق کو الگ کرنے اور قبضے کے خاتمے کو  عراق کی حکومت اور عوام پر سیکورٹی معاہدوں کو مسلط کئے  جانے  یا بعض معاہدوں کی منظوری سے مشروط نہیں کیا جانا چاہئے۔منوچہر متکی نے اسرائیل کے روز افزوں مظالم کے سلسلے میں بڑی طاقتوں اور بین الاقوامی اداروں کی خاموشی پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مشرق وسطی کے بحران کا منصفانہ حل صرف فلسطینیوں کے حقوق کی ادائیگی اور  آزاد فلسطینی مملکت کے قیام کے ذریعے ہی کہ جس کا دارالحکومت بیت المقدس ہو، حل ہو ‌سکتاہے۔

واضح رہے کہ او آئی سی کے تمام ستاون رکن  ممالک کے وزرا ئے خارجہ کا پینتیسواں اجلاس کمپالا میں جمعہ کو ایک بیان جاری کرنے کے بعد ختم ہو جائے گا ۔


source : http://www.abna.ir/data.asp?lang=6&Id=112137
  756
  0
  0
امتیاز شما به این مطلب ؟

latest article

آل سعود کا حج سے وہابیت کی تبلیغ کا ناجائز فائدہ
حضرت فاطمہ زہرا(س) مسلمان خواتین کے نمونہ ہیں: حجت ...
’موجودہ دور میں تکفیری رجحانات کا خطرہ‘‘ کے زیر ...
حجت‌الاسلام صحتی: امریکی ڈالر؛ تشیع کے خلاف استعمال ...
غزہ پر اسرئیل کی جانب سے زہریلی گیس کے استعمال کا ...
اسلامي انقلاب ميں خواتين کا صبر و استقامت اورمعرفت
ايران سے يورپ نئي پروازوں كا آغاز جلد ہوگا
نائیجیریا میں بم دھماکے سے 42 افراد جاں بحق
بحرین میں برائیوں کی ترویج پر شیعہ علماء کی کڑی تنقید
اتنے کمزور نہیں کہ جوا ب نہ دے سکیں اسرائیل کو حملے کی ...

 
user comment