اردو
Friday 25th of September 2020
  877
  0
  0

مساجد اور کلیسا اسرائيلی حملوں کا نشانہ ہیں

سياسی گروپ: لبنان كے شيعہ عالم دين سيد علی مكی نے ۲۷ جون كو اس بات پر زور ديا ہے كہ اسرائيل نے اپنے حملوں میں مساجد اور كليسا كو ٹارگٹ بنا ركھا ہے۔

بين الاقوامی قرآنی خبررساں ايجنسی "ايكناۡ" شعبہ لبنان كی رپورٹ كے مطابق سيد علی مكی نےلبنان كے مسلمانوں اور عيسائيوں كو ان ظالموں كا مقابلہ كرنے كے لئے ايك دوسرے سے تعاون كی دعوت ديتے ہوئے كہا كہ صیہونی حكومت كے حملوں سے مساجد اور كليسا بھی محفوظ نہیں ہیں۔

انہوں نے ملتوں كے درميان محبت اور بھائے چارے كے قيام كی ضرورت پر زور ديتے ہوئے كہا كہ اسلام اور عيسائيت ايك دوسرے سے دشمنی كو قبول نہیں كرتے۔


source : http://www.iqna.ir/ur/news_detail.php?ProdID=606233
  877
  0
  0
امتیاز شما به این مطلب ؟

latest article

آل سعود کا حج سے وہابیت کی تبلیغ کا ناجائز فائدہ
حضرت فاطمہ زہرا(س) مسلمان خواتین کے نمونہ ہیں: حجت ...
’موجودہ دور میں تکفیری رجحانات کا خطرہ‘‘ کے زیر ...
حجت‌الاسلام صحتی: امریکی ڈالر؛ تشیع کے خلاف استعمال ...
غزہ پر اسرئیل کی جانب سے زہریلی گیس کے استعمال کا ...
اسلامي انقلاب ميں خواتين کا صبر و استقامت اورمعرفت
ايران سے يورپ نئي پروازوں كا آغاز جلد ہوگا
نائیجیریا میں بم دھماکے سے 42 افراد جاں بحق
بحرین میں برائیوں کی ترویج پر شیعہ علماء کی کڑی تنقید
اتنے کمزور نہیں کہ جوا ب نہ دے سکیں اسرائیل کو حملے کی ...

 
user comment