اردو
Sunday 3rd of July 2022
70
0
نفر 0

امدادی بیڑے پر حملہ: نیکاراگوا نے اسرائیل سے سفارتی تعلقات منقطع کردیے

غزہ کے لیے امدادی سامان کے کرآنے والے بحری جہاز" آزادی" پراسرائیل کی فوجی جارحیت کے خلاف احتجاج کا دائرہ وسیع ہوتا جارہا ہے.

جمہوریہ نیکارا گوا نے امدادی بیڑے پرحملے کے خلاف احتجاج اسرائیل سے سفارتی تعلقات منطع کرتے ہوئے تل ابیب سے اپنا سفیر واپس اور صہونی سفارتی عملے کو ملک سے نکال دیا ہے۔        نیکارا گوا کے صدر " ڈینینل ارٹیگا " کے سرکاری ریڈیو پر نشر ہونے والے بیان میں انہوں نےکہا کہ وہ اسرائیلی فوج کےامدادی قافلے پرحملے پر انہیں شدید صدمہ پہنچا۔ یہ ایک قابل مذمت اقدام ہے ۔ نیکارا گوا اسرائیلی فوج کے اس اقدام کو انسانی حقوق کے خلاف جنگی جرم اور عالمی قوانین کی سنگین خلاف ورزی قراردیتا ہے۔ انسانی ہمدردی کی بنیاد پرغزہ جانے والے امدادی قافلے پر حملہ  ناقابل برداشت ہے۔ لہٰذا وہ اہل غزہ کےساتھ اظہار یکجہتی اور اسرائیلی حکومت کے خلاف احتجاجا وہ تل ابیب سے سفارتی تعلقات منقطع کر رہے ہیں۔                                      نیکارا گوا کے صدر نے اسرائیل سے امدادی عملے کے تمام گرفتار رضاکاروں کی فوری رہائی اورغزہ کی معاشی ناکہ بندی ختم کرنے کا بھی مطالبہ کیا۔                                    واضح رہے کہ  دو سال قبل غزہ پر اسرائیلی حملے کے خلاف احتجاجا وینز ویلا، بولیویا اور کیوبا نے بھی اسرائیل سے تعلقات ختم کردیے تھے جو تاحال منقطع ہیں۔جبکہ قابل افسوس امر یہ ہے کہ عرب ممالک کی طرف سے ایسا کوئی عمل دیکھنے میں نہیں ملا۔

 


source : http://abna.ir/data.asp?lang=6&Id=190509
70
0
0% (نفر 0)
 
نظر شما در مورد این مطلب ؟
 
امتیاز شما به این مطلب ؟
اشتراک گذاری در شبکه های اجتماعی:
لینک کوتاه

latest article

پچيس لاكھ فرزندان توحيد نے فريضہ حج كا آغاز كرديا
قطر میں قرآن كريم میں تدبر كے موضوع پر تعليمی ...
کویت میں شہید ہونے والے بلتستانی مومن کا جسد ...
كينيا میں حجاب پر پابندی كے خلاف طالبات كا مطاہرہ
ملائشيا ، صوبہ پنانگ میں اسلامی يونيورسٹی كا قيام
ابوظہبی كی كتب نمائش میں اسلامی جمہوریہ ايران كی ...
ہندوستان کے ایک اسلامی سکول میں پردہ لازمی
آل سعود کے خلاف یمنیوں کو حج سے محروم کرنے پر صنعا ...
اسلامی ممالك كی جانب سے پاكستان كو ايك ارب ڈالر ...
سعودی عرب کے مشرقی علاقے کی مسجد امام رضا(ع) پر ...

 
user comment