اردو
Tuesday 19th of March 2019
  766
  0
  0

دین و سیاست کے تعلق کے مصور آےت اللہ سیستانی ہیں۔ امریکی تجزیہ نگار

ایک امریکی تجزیہ نگار نے کہا ہے کہ: عراق کے دینی پیشوا اور مرجع تقلید آیت اللہ العظمی سیدعلی سیستانی عراق کی تاریخ کے ایک تزویری دور (Strategic Age) میں سیاست ـ دین اور حکومت کے درمیان ربط کے مصور ہیں۔

اہل البیت (ع) نیوز ایجنسی ـ ابنا ـ کی رپورٹ کے مطابق اسٹبفن لی مائرز (Steven Lee Myers) نے کہا ہے کہ آیت اللہ العظمی سیدعلی سیستانی نے انتخابات میں کسی بھی گروہ یا جماعت حتی کہ اکلوتی مذہبی جماعت کی حمایت سے انکار کیا اور عوام کو انتخابات میں کسی شخص یا پارٹی کی حمایت کی دعوت دیئے بغیر انتخابات میں حصہ لینے کی ہدایت کرکے ثابت کردیا کہ وہ نہایت سنجیدہ اور قابل قدر مذہبی سیاستدان ہیں جنہوں نے دین اور سیاست کے درمیان مناسب تعلق قائم کررکھا ہے۔ 
انھوں نے کہا کہ آیت اللہ العظمی سیستانی کے افکار و آراء عراق کے مستقبل پر عظیم اثرات مرتب ہوں گے؛ وہ بعثی حکمرانوں کے تاریک دور میں ایک طویل عرصے تک شیعیان عراق کی محرومیت اور مظلومیت کے پیش نظر انتخابات میں کسی بھی جماعت یا فرد کی حمایت کرسکتے تھے مگر انھوں نے ایسا نہیں کیا اور ان کے اس اقدام سے ظاہر ہوتا ہے کہ وہ عراق کے مستقبل کا بخوبی اندازہ لگا سکے ہیں اور مستقبل میں ان کے اس اقدام کے دور رس اور مثبت نتائج برآمد ہونگے۔ 


source : http://www.abna.ir/data.asp?lang=6&Id=180934
  766
  0
  0
امتیاز شما به این مطلب ؟

latest article

      خلیج فارس کی عرب ریاستوں میں عید الاضحی منائی جارہی ہے
      پاکستان، ہندوستان، بنگلہ دیش اور بعض دیگر اسلامی ...
      پاکستان کی نئی حکومت: امیدیں اور مسائل
      ایرانی ڈاکٹروں نے کیا فلسطینی بیماروں کا مفت علاج+ ...
      حزب اللہ کا بے سر شہید پانچ سال بعد آغوش مادر میں+تصاویر
      امریکہ کے ساتھ مذاکرات کے لیے امام خمینی نے بھی منع کیا ...
      کابل میں عید الفطر کے موقع پر صدر اشرف غنی کا خطاب
      ایرانی ڈاکٹروں کی کراچی میں جگر کی کامیاب پیوندکاری
      شیطان بزرگ جتنا بھی سرمایہ خرچ کرے اس علاقے میں اپنے ...
      رہبر انقلاب اسلامی سے ایرانی حکام اور اسلامی ممالک کے ...

 
user comment